• کورونا وائرس پر صوبائی ٹاسک فورس آج کراچی میں مکمل لاک ڈاؤن لگانے پر غور کرے گی۔
  • کوویڈ 19 کے انفیکشن کراچی میں خطرناک حد تک بڑھ گئے ہیں۔
  • اگر لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا گیا تو تعلیمی ادارے اور انٹر سٹی اور انٹرا سٹی ٹرانسپورٹ بھی بند ہو جائے گی۔

کراچی: جمعہ کو وزیراعلیٰ ہاؤس میں کورونا وائرس کے بارے میں صوبائی ٹاسک فورس کے دوران کراچی میں دو ہفتوں کا لاک ڈاؤن نافذ ہوگا یا نہیں اس بارے میں فیصلہ آج کیا جائے گا۔

وزیراعلیٰ مراد علی شاہ اجلاس کی صدارت کریں گے ، صوبائی وزراء اور صحت کے ماہرین شرکت کریں گے۔

ذرائع نے بتایا کہ پہلی مرتبہ سیاسی جماعتوں کے پارلیمانی رہنماؤں کو بھی اجلاس میں مدعو کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: کراچی کو کورونا وائرس لاک ڈاؤن کی اشد ضرورت کیوں ہے؟

محکمہ صحت سندھ نے کراچی میں وبائی امراض کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے دو ہفتوں کے مکمل لاک ڈاؤن کی سفارش کی ہے کیونکہ میگا سٹی میں مثبت شرح 30 فیصد سے زیادہ ہوچکی ہے۔

کراچی میں کوویڈ 19 کے دوبارہ اضافے کے پریشان کن حالات کے پیش نظر ، ٹاسک فورس کو ایک مضبوط تجویز موصول ہوئی ہے کہ وہ شہر میں مکمل لاک ڈاؤن نافذ کرے۔

یہ بھی پڑھیں: کراچی میں کورونا وائرس کی مثبت شرح 30 فیصد سے زیادہ ہوگئی

طبی ماہرین اور محکمہ صحت نے دو ہفتوں کے لیے بین شہر اور اندرون شہر آمد و رفت روکنے کی تجویز دی۔

ذرائع نے بتایا کہ تعلیمی ادارے بھی دو ہفتوں کے لیے بند کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔

.



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published.