12 ستمبر 2021 کو کنٹونمنٹ بورڈ کے انتخابات کے لیے کراچی کے ایک پولنگ اسٹیشن پر ووٹ ڈالنے کے بعد خواتین کا ایک گروہ اپنے سیاہ انگوٹھے دکھا رہا ہے۔ – دی نیوز/زاہد رحمان
  • 42 کنٹونمنٹ بورڈز کے 219 وارڈز میں کل 1،569 امیدوار انتخابات کے لیے کھڑے تھے۔
  • سات امیدوار پہلے ہی بلامقابلہ منتخب ہو چکے ہیں۔
  • کامرہ کے چار وارڈز میں پولنگ نہیں ہو گی اور راولپنڈی اور پنو عاقل میں ایک ایک وارڈ میں ملتوی کر دیا گیا ہے۔
  • حکمران پی ٹی آئی نے سب سے زیادہ 183 امیدوار کھڑے کیے ہیں۔

پاکستان بھر میں کنٹونمنٹ بورڈز میں بلدیاتی انتخابات کے لیے پولنگ کا وقت ختم ہو گیا ہے اور ووٹوں کی گنتی شروع ہو گئی ہے۔

42 کنٹونمنٹ بورڈز کے 219 وارڈز میں کل 1،569 امیدوار انتخابات کے لیے کھڑے تھے۔

کل 219 وارڈوں کے امیدواروں میں سے سات امیدوار پہلے ہی بلامقابلہ منتخب ہو چکے ہیں۔ اس کے علاوہ کامرہ کے چار وارڈز میں کوئی مقابلہ نہیں ، راولپنڈی کے ایک وارڈ میں کوئی نہیں اور پنو عاقل کے ایک وارڈ میں کوئی مقابلہ نہیں۔

چنانچہ آج 206 وارڈز میں پولنگ ہوئی۔

پولنگ کا عمل صبح 8 بجے شروع ہوا اور شام 5 بجے تک جاری رہا۔ پولنگ سٹیشن کے اندر ووٹر اب بھی ووٹ ڈال سکیں گے۔ باہر قطار میں کھڑے لوگوں کے لیے دروازے بند کر دیے گئے ہیں۔

لاہور میں تین دن کی مسلسل بارش کے باعث مختلف علاقوں میں بارش کا پانی جمع ہونے کی وجہ سے کچھ پولنگ سٹیشنوں پر پولنگ کا عمل تاخیر کا شکار ہوا جبکہ ملتان کے وارڈ نمبر 4 کے ایک پولنگ اسٹیشن پر دو جھڑپوں کے باعث پولنگ کا عمل عارضی طور پر معطل ہو گیا۔

گوجرانوالہ چھاؤنی الیکشن کے لیے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار ملک آزاد سے گفتگو کرتے ہوئے۔ جیو نیوز۔، الزام لگایا کہ پولنگ عملہ پارٹی کے ووٹرز کو ووٹ ڈالنے سے روک رہا ہے۔

آزاد نے کہا کہ بغیر کسی وجہ کے ہمارے ووٹوں پر اعتراضات اٹھائے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب میں شکایت کے لیے اندر گیا تو مجھے بھی روک دیا گیا۔

پولنگ بوتھ پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔ الیکشن کمیشن نے صوبائی حکومتوں کو انتہائی حساس پولنگ اسٹیشنوں پر کیمرے لگانے کی ہدایت کی تھی اور کہا تھا کہ پریزائیڈنگ افسران پولنگ اسٹیشنز پر نتائج کا اعلان گنتی ختم ہونے کے بعد کریں گے۔ تمام پولنگ ایجنٹ اور امیدوار پریزائیڈنگ آفیسر سے نتائج کی ایک کاپی وصول کریں گے۔

آج کے انتخابات میں ملک بھر سے 684 آزاد امیدوار میدان میں ہیں جبکہ سیاسی جماعتوں کے 876 امیدوار بھی مقابلہ کر رہے ہیں۔

پی ٹی آئی کی جانب سے سب سے زیادہ 183 امیدوار ہیں ، جبکہ 144 مسلم لیگ (ن) ، 113 پیپلز پارٹی ، 104 جماعت اسلامی ، 42 قومی متحدہ موومنٹ ، 42 پاک سرزمین پارٹی ، 34 مسلم لیگ (ق) اور 25 امیدوار ہیں۔ JUI-F سے

مزید یہ کہ کالعدم تحریک لبیک پاکستان کے 83 امیدوار بھی مقابلہ کر رہے ہیں۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *