کراچی میں کرنٹ لگنے سے 4 افراد جاں بحق تصویر: فائل۔
  • پی اے ایف بیس فیصل میں سب سے زیادہ بارش ہوتی ہے جہاں تقریبا 69 69 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔
  • تانیہ نامی چار سالہ بچی اس وقت کرنٹ لگنے سے مر گئی جب وہ کلفٹن میں بارش کے دوران اپنے گھر کے باہر کھیل رہی تھی۔
  • میٹ آفس کا کہنا ہے کہ آج شام تک میٹروپولیس میں درمیانے سے تیز بارش کی توقع ہے۔

کراچی: کراچی میں جمعہ کے روز وقفے وقفے سے ہونے والی موسلا دھار بارش نے شہری اور کے الیکٹرک کے نظام کو تباہ کر دیا۔

کراچی کے جنوبی جنوب مشرق میں موجود مون سون سسٹم کے زیر اثر پورٹ سٹی کے مختلف علاقوں میں ہفتہ کو درمیانے درجے سے موسلادھار بارشیں ہوتی رہیں۔

محکمہ موسمیات کے مطابق سعدی ٹاؤن میں سب سے زیادہ بارش ہوئی جہاں تقریبا 8 81 ملی میٹر بارش ہوئی ، گلشن حدید میں 73 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ، پی اے ایف بیس فیصل 70 ملی میٹر ، کراچی یونیورسٹی روڈ 69 ملی میٹر ، نارتھ کراچی 48 ملی میٹر ، قائد آباد اس رپورٹ کے درج ہونے تک 35 ملی میٹر ، سرجانی ٹاؤن 38.8 ملی میٹر اور اورنگی ٹاؤن 11.6 ملی میٹر۔

ریسکیو ذرائع نے بتایا کہ تانیہ نامی چار سالہ بچی کلفٹن کے علاقے شاہ رسول کالونی میں بارش کے دوران اپنے گھر کے باہر کھیلتے ہوئے کرنٹ لگنے سے جاں بحق ہوگئی۔ ریسکیو ذرائع نے بتایا کہ تین دیگر افراد بلدیہ ٹاؤن ، لائٹ ہاؤس اور شریف آباد کے علاقوں میں کرنٹ لگنے سے جاں بحق ہوئے۔

محکمہ موسمیات نے آج مزید بارش کی پیش گوئی کی ہے۔

دریں اثنا ، محکمہ موسمیات نے آج (آج) بندرگاہی شہر میں گرج چمک کے ساتھ مزید بارش کی پیش گوئی کی ہے۔

پی ایم ڈی نے کہا کہ آج شام تک شہر میں درمیانے سے موسلادھار بارش کی توقع ہے کیونکہ کراچی کے جنوب مشرق میں مون سون کا نظام برقرار ہے۔

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ آج شہر کا موسم جزوی طور پر ابر آلود رہے گا جبکہ کراچی میں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 33 سے 35 ڈگری سینٹی گریڈ کے درمیان رہنے کی توقع ہے۔

ٹریفک جام ، بجلی کی بندش۔

بارش شروع ہونے کے فورا بعد ، شہر کے کئی علاقوں میں بجلی کی بندش کی اطلاع ملی ، جیسے گلستان جوہر ، گلشن اقبال ، ناظم آباد ، نارتھ ناظم آباد ، سرجانی ٹاؤن ، بوٹ بیسن ، کورنگی ، شاہ فیصل ٹاؤن ، رنچور لائن ، کیماڑی ، کھڈا مارکیٹ ، سلطان آباد ، نارتھ کراچی ، ڈیفنس ہاؤسنگ اتھارٹی (ڈی ایچ اے) کے علاقے ، اختر کالونی اور لیاری۔ مبینہ طور پر 270 سے زائد فیڈرز کو بجلی کی فراہمی معطل ہے۔

شارع فیصل ، یونیورسٹی روڈ ، راشد منہاس روڈ ، نیپا ، شارع پاکستان اور شہر کی دیگر اہم یا چھوٹی شریانوں پر بھی بڑے پیمانے پر ٹریفک جام کی اطلاع ملی۔ میٹرو پول چورنگی پر شام کے بعد ٹریفک جام کی اطلاع بھی ملی۔ بلوچ کالونی ، نرسری ، کارساز بھی ٹریفک کی نقل و حرکت کے لیے بند تھے۔

شہر کی مرکزی شریان شاہراہ فیصل کے مختلف مقامات پر بارش کا پانی اب بھی جمع ہے جس سے ٹریفک کی روانی میں رکاوٹ پیدا ہوتی ہے اور مسافروں کے لیے رکاوٹیں پیدا ہوتی ہیں۔ قیوم آباد چورنگی ، کورنگی ایکسپریس وے ، بلوچ کالونی ایکسپریس وے ، شاہ فیصل کالونی لیاقت آباد اور بندرگاہی شہر کے دیگر علاقوں کے قریب بھی پانی جمع ہوگیا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *