مبینہ طور پر کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے مرکزی رہنما مفتی خالد کو مبینہ طور پر افغانستان کے صوبہ کنڑ میں قتل کیا گیا ہے۔

ذرائع نے پولیس کے حوالے سے بتایا ہے کہ ٹی ٹی پی کونسل کے رکن مفتی خالد نامعلوم شخص نے سفر کے دوران جاں بحق ہوگئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اس کا تعلق بونیر سے تھا اور وہ ٹی ٹی پی کے بدنام زمانہ سربراہ ملا فضل اللہ کا قریبی ساتھی تھا۔

ذرائع کے مطابق ، خیال کیا جاتا ہے کہ وہ 2008 میں ایک انتخابی ریلی میں خودکش بم دھماکے کا ماسٹر مائنڈ تھا۔

وہ پشاور میں آرمی پبلک اسکول اور باچا خان یونیورسٹی پر حملوں کی سہولت اور منصوبہ بندی کرنے کے لئے بھی مطلوب تھا۔





Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *