• سندھ کِک نے موبائل ویکسینیشن سروس کراچی سے شروع کی۔
  • ڈور ٹو ڈور موبلائزیشن مہم میں پنجاب کے مزید 3 اضلاع شامل ہیں۔
  • ویکسینیشن کوویڈ 19 کے خلاف محفوظ رہنے کی کلید ہے ، سارہ اسلم۔

ڈور ٹو ڈور ویکسینیشن سروسز کراچی کے ایک ضلع اور پنجاب کے مزید تین اضلاع میں کام شروع کریں گی کیونکہ ملک بھر میں کورونا وائرس کی مثبت شرح میں اضافہ ہوتا ہے۔

سندھ حکومت کے ترجمان مرتضی وہاب نے کراچی میں پہلی موبائل ویکسینیشن وین کا افتتاح کیا۔ کراچی کے ایک ضلع میں ڈور ٹو ڈور ویکسینیشن خدمات کل سے شروع ہو رہی ہیں۔

مرتضی وہاب نے کہا کہ جلد ہی شہر کے تمام اضلاع میں موبائل ویکسینیشن شروع کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ موبائل ویکسینیشن کی خدمات تمام شہریوں کی زندگی کو آسان بنائے گی۔

مرتضیٰ وہاب نے ویکسین لگانے پر شہریوں کا شکریہ بھی ادا کیا۔

پچھلے کچھ دنوں میں کورونا وائرس کے خلاف ویکسین لینے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ مرتضی وہاب نے بتایا کہ یکم اگست کو سندھ میں 211،000 افراد کو ویکسین دی گئی۔

پنجاب میں موبائل ویکسینیشن مہم

سیکرٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر پنجاب ، سارہ اسلم نے یہ بھی اعلان کیا کہ خصوصی ڈور ٹو ڈور سوشل موبلائزیشن مہم میں مزید تین اضلاع شامل کیے جا رہے ہیں۔

نئے شامل ہونے والے اضلاع میں سیالکوٹ ، گجرات اور سرگودھا شامل ہیں۔

اسلم نے اعلان کیا کہ یہ مہم 26 جولائی سے 14 اگست تک چلے گی۔ مہم کے اندر شہریوں کو یونین کونسل کی سطح پر ان کی دہلیز پر ویکسین دی جائے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ صحت نے محرم کے مہینے میں مجالس میں شرکت کرنے والے سوگواروں کو حفاظتی ٹیکے لگانے کا بھی منصوبہ بنایا ہے۔

سارہ اسلم نے عوام کو یہ بھی ہدایت کی کہ وہ حکومت کے لازمی معیاری آپریٹنگ طریقہ کار (ایس او پیز) پر عمل کریں اور اپنے آپ کو بروقت ویکسین کروائیں کیونکہ یہ ڈیلٹا کی مختلف حالتوں سے نمٹنے کی واحد کلید ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ممکنہ طور پر ڈیلٹا مختلف قسم پاکستان اور دنیا بھر میں COVID-19 کے غالب تناؤ میں سے ایک ہے۔

.



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *