فواد چوہدری پاک افغان میڈیا کانفرنس میں ایک تقریب سے خطاب کر رہے ہیں۔ تصویر: بشکریہ پاک افغان یوتھ فورم/ ٹویٹر
  • پاکستان افغانستان میں امن اور مستحکم حکومت چاہتا ہے ، فواد چوہدری
  • وزیر اطلاعات کا کہنا ہے کہ پاکستان افغانستان میں کسی ایک گروہ کی حمایت یا مضبوطی نہیں کر رہا۔
  • پاک افغان یوتھ فورم کی تقریب میں چوہدری کا کہنا ہے کہ پاکستان کی مستقبل کی معیشت کے لیے مستحکم افغانستان ضروری ہے۔

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ پاکستان افغانستان میں کسی ایک گروہ کی حمایت یا مضبوطی نہیں کر رہا بلکہ وہ ایسا ماحول بنانے کی کوشش کر رہا ہے جہاں تمام دھڑے اکٹھے ہو کر ایک مشترکہ حکومت بنائیں۔

چوہدری نے یہ بات جمعہ کو پاک افغان یوتھ فورم کے زیر اہتمام ایک تقریب میں کہی۔ انہوں نے کہا کہ یہ افغانستان میں امن قائم کرنے اور مستحکم حکومت بنانے کا واحد راستہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ کسی بھی گروپ کے پاس اتنی طاقت نہیں کہ وہ مستحکم حکومت بنا سکے۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ خطے کی مستقبل کی معیشت ایک مستحکم اور پرامن افغانستان پر منحصر ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان وسطی ایشیائی ریاستوں تک رسائی حاصل کرنا چاہتا ہے اور ان کے ساتھ مضبوط تعلقات استوار کرنا چاہتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان پہلے ہی ازبکستان کے ساتھ ریلوے ٹریک منصوبے پر دستخط کر چکا ہے جو پشاور سے مزار شریف اور پھر تاشقند تک چلے گا۔

انہوں نے ٹرک کے ذریعے افغانستان کے راستے وسطی ایشیائی ریاستوں میں تجارت کو فروغ دینے کے بارے میں بھی بات کی اور زور دیا کہ اس طرح کے منصوبوں کو کامیاب بنانے کے لیے افغانستان میں امن ضروری ہے۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان میں امن قائم کرنا ایک مشکل کام ہے اور پاکستان اور افغانستان سپر پاورز کی کارروائیوں کے نتائج بھگت رہے ہیں۔

قبل ازیں پاک افغان یوتھ فورم سے وزیراعظم اور آرمی چیف نے خطاب کیا۔ افغان وفد نے وزیراعظم سے آن لائن پشتو اور دری سب ٹائٹلز کی مدد سے ملاقات کی۔

چوہدری نے کہا کہ وزیراعظم نے افغان صحافیوں اور نوجوانوں سے پاک افغان مستقبل کی تعمیر کے بارے میں بات کی۔

.



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *