ایک تصویر جس میں ماسک پہنے ایک خاتون کوویڈ 19 جاب حاصل کر رہی ہے۔ تصویر: اے ایف پی/فائل
  • محکمہ صحت سندھ کا کہنا ہے کہ بغیر شناختی کارڈ کے لوگوں کو اپنے بی فارم یا تعلیمی دستاویزات دکھانا ہوں گی۔
  • سندھ کے وزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے 30 جولائی کو اعلان کیا تھا کہ حکومت ان شہریوں کو کوویڈ 19 جابس دے گی جن کے پاس شناختی کارڈ نہیں ہے۔
  • کراچی میں 2 ہزار سے زائد شہریوں کو پہلے ہی اپنا شناختی کارڈ دکھائے بغیر کورونا وائرس کی ویکسین پلائی جا چکی ہے۔

کراچی: زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ناول کورونا وائرس کے خلاف ویکسین لگانے کی ترغیب دینے کے لیے ، محکمہ صحت سندھ نے اعلان کیا ہے کہ وہ کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈ (CNIC) کے بغیر لوگوں کو ٹیکہ لگانا شروع کردے گا۔

محکمہ صحت سندھ کے مطابق جن کے پاس شناختی کارڈ نہیں ہے انہیں اپنے ویکسین لگانے کے لیے اپنے بی فارم یا تعلیمی دستاویزات دکھانا ہوں گی۔

کی طرف سے شائع ایک رپورٹ کے مطابق ڈان کی، سندھ کے وزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے 30 جولائی کو اعلان کیا تھا کہ حکومت ان شہریوں کو کوویڈ 19 جابس کا انتظام کرے گی جن کے پاس شناختی کارڈ نہیں ہے ، انہوں نے مزید کہا کہ اس مقصد کے طریقوں کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔

رپورٹ میں محکمہ صحت سندھ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ کراچی میں 2 ہزار سے زائد شہریوں کو پہلے ہی اپنا شناختی کارڈ دکھائے بغیر کورونا وائرس کی ویکسین پلائی جا چکی ہے۔

چونکہ تمام ٹیکے لگائے گئے شہریوں سے متعلقہ اعداد و شمار حکومت کی طرف سے جمع کیے جانے چاہئیں ، بغیر شناختی کارڈ کے افراد کو ویکسینیشن مراکز میں اپنے بائیومیٹرک کروانا پڑتے ہیں اور اپنے موبائل فون نمبرز کو رجسٹرڈ کروا کر عمل مکمل کرنا پڑتا ہے۔

کوویڈ 19 نے مزید 36 مریضوں کا دعویٰ کیا ، سندھ میں 1،847 دیگر متاثر ہوئے۔

سندھ میں پیر تک کورونا وائرس سے مزید 36 مریض انتقال کرگئے ، جس سے اموات کی تعداد 6،057 ہوگئی۔ دریں اثنا ، وزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے پیر کو جاری کردہ ایک بیان میں کہا کہ جب صوبے میں 13،107 ٹیسٹ کیے گئے تو 1،847 نئے کیس سامنے آئے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اب تک 5،039،917 ٹیسٹ کیے جا چکے ہیں جن کے خلاف 387،145 کیسز کی تشخیص کی گئی جن میں سے 86٪ یا 333،102 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں جن میں رات بھر 325 شامل ہیں۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *