تصویر: فائل
  • اوگرا نے یکم جون سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی تجویز پیش کرتے ہوئے سمری پیٹرولیم ڈویژن کو ارسال کی ہے۔
  • اوگرا نے فی ذرائع ڈیزل کی قیمت میں ساڑھے چار روپے 30 پیسے اضافے کی تجویز پیش کی ہے۔
  • ذرائع نے بتایا کہ پٹرول اور مٹی کے تیل کی قیمتوں میں معمولی اضافے کی تجویز بھی دی گئی ہے۔

ذرائع نے اتوار کو بتایا کہ آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے یکم جون سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں پر نظرثانی کے لئے پٹرولیم ڈویژن کو سمری ارسال کردی ہے۔

ذرائع کے مطابق اوگرا نے ڈیزل کی قیمت میں فی لیٹر 4.30 روپے اضافے کی تجویز پیش کی ہے جبکہ پیٹرول اور مٹی کے تیل کی قیمتوں میں معمولی اضافے کی تجویز بھی دی گئی ہے۔

تاہم ، اوگرا لائٹ ڈیزل کی قیمت برقرار رکھنے کی تجویز کر رہا ہے۔

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں سے متعلق حتمی فیصلہ وزارت خزانہ وزیر اعظم عمران خان سے مشاورت سے کرے گی۔

پندرہ مئی کو حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کو مئی کے بقیہ مہینے تک بدستور رکھنے کا فیصلہ کیا تھا۔

وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات فرخ حبیب نے کہا تھا کہ “پٹرولیم مصنوعات کی قیمت 31 مئی تک یکساں رہے گی۔” وزیر اعظم عمران خان نے بین الاقوامی مارکیٹ میں شرحوں میں اضافے کے باوجود عوام پر بوجھ نہ ڈالنے کا فیصلہ کیا ہے۔

وزیر نے دعوی کیا تھا کہ اگر پیٹرولیم مصنوعات کے نرخوں میں اضافہ نہ کیا گیا تو قومی خزانے کو 2 ارب 77 کروڑ روپے کا نقصان ہوگا۔

“حکومت نے نہ صرف پٹرولیم لیوی کو ایڈجسٹ کیا ہے بلکہ ہلکے ڈیزل اور مٹی کے تیل پر سیلز ٹیکس میں بھی کمی کی ہے۔”

اس لئے کل 31 مئی تک پیٹرول کی قیمت 108.56 روپے فی لیٹر ، ڈیزل 1110.76 روپے فی لیٹر ، مٹی کا تیل 80 روپے ، اور لائٹ ڈیزل آئل 77.65 روپے فی لیٹر ہے۔





Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *