اوکاڑہ:

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے ریلوے کے چیئرمین میاں محمد معین خان وٹو نے ریلوے انتظامیہ کو ہدایت کی ہے کہ منڈی احمد آباد اور بصیر پور سمیت ضلع اوکاڑہ میں غریب دکانداروں کی تمام دکانوں اور سٹالوں کو فوری طور پر سیل کر دیا جائے۔

ریلوے ہیڈ کوارٹرز میں قائمہ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے چیئرپرسن نے تنظیم کی بہتری کے لیے اٹھائے گئے اقدامات کا جائزہ لیا۔

ذرائع کے مطابق کئی ایم این اے نے ریلوے کے ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ کی تبدیلی کا بھی مطالبہ کیا۔ انہوں نے الزام لگایا کہ اہلکار اپنے کام پر توجہ نہیں دے رہا تھا ، جس کی وجہ سے سکھر ریجن میں ریلوے حادثات رونما ہوئے تھے۔

چیئرمین نے ڈی ایس کو تبدیل کرنے کا حکم دیا اور کچھ معاملات پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے افسران کو اپنی کارکردگی بہتر بنانے کی ہدایت کی۔

انہوں نے وزیر ریلوے اعظم سواتی پر بھی زور دیا کہ وہ قائمہ کمیٹی کے اجلاسوں میں اپنی شرکت کو یقینی بنائیں۔

چیئرپرسن کو اوکاڑہ سمیت مختلف اضلاع میں ریلوے حکام کی جانب سے سیل کی گئی دکانوں اور سٹالز کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔

انہوں نے بصیر پور ، منڈی احمد آباد اور ضلع اوکاڑہ کے دیگر اسٹیشنوں پر سیل شدہ دکانوں اور کیوسکوں کو فوری طور پر سیل کرنے کا حکم دیا۔

انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ دکانوں کی ٹی لیز کی نیلامی کو شفاف بنایا جائے اور محکمہ ریلوے کی زمین پر قائم کئے گئے دکانوں کا کرایہ مقرر کیا جائے۔

پیپلز پارٹی کے ایم این اے رمیش لال نے بتایا۔ ایکسپریس ٹریبیون۔ کہ سکھر میں ٹرین حادثے کے بعد منعقدہ میٹنگ میں کئی ایم این ایز اور سینئر افسران نے شرکت کی جن میں ایڈیشنل سیکرٹری ظفر رانجھا اور ایم این اے نعمان شیخ شامل تھے۔ انہوں نے کہا کہ ایک رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ڈی ایس کی جانب سے غفلت دیکھی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایم این اے نے پارلیمانی کمیٹی کے چیئرمین پر زور دیا ہے کہ وہ اہلکار کے خلاف کارروائی کا حکم دیں تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ مزید حادثات نہ ہوں۔

ایم این اے وٹو نے مبینہ طور پر کمیٹی کے اگلے اجلاس میں رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا۔

ایکسپریس ٹریبیون ، اگست 29 میں شائع ہوا۔ویں، 2021۔

.



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *