کراچی:

کربلا میں حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ اور ان کے ساتھیوں کی عظیم قربانی کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے ملک بھر میں یوم عاشور ، 10 محرم کو جمعرات کو منایا گیا۔

محرم حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ کے ساتویں صدی کی شہادت کے لیے سوگ کا مہینہ ہے ، جو نواسہ رسول (ص) کے پوتے ہیں۔ ملک کے تمام شہروں اور قصبوں میں ماتمی جلوس نکالے گئے۔

کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے بچنے کے لیے سخت حفاظتی اقدامات اور کچھ سڑکوں کی بندش بھی موجود تھی۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں بشمول پولیس ، رینجرز ، ایف سی اور دیگر نے جلوس کے راستوں پر فول پروف سیکورٹی کو یقینی بنایا۔

مختلف شہروں میں حفاظتی اقدام کے طور پر موبائل فون سروس جزوی طور پر معطل تھی۔ میڈیکل کیمپ ، سبیلز۔ اور شرکاء کو مدد فراہم کرنے کے لیے سٹالز کا بھی اہتمام کیا گیا۔

علماء اور ظہیرین نے جلوسوں کے دوران حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ کی تعلیمات اور سانحہ کربلا کے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالی۔

کوویڈ 19 کے پھیلاؤ کو کم کرنے کے لیے جلوسوں کے لیے معیاری آپریٹنگ طریقہ کار (ایس او پیز) جاری کیے گئے۔

کراچی میں مرکزی جلوس نشتر پارک سے شروع ہوا اور مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا حسینیہ ایرانی امام بارگاہ کھارادر میں اختتام پذیر ہوا۔

حیدرآباد ، نواب شاہ ، میرپور خاص ، سکھر اور سندھ کے دیگر شہروں میں بھی جلوس نکالے گئے۔

مزید پڑھ: پشاور میں محرم کے جلوس سے قبل موبائل سروس معطل

پنجاب ، بلوچستان اور خیبر پختونخوا کے مختلف شہروں میں بھی عاشورہ کے جلوس نکالے گئے ، راستوں پر قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کی بھاری نفری تعینات تھی۔

اس موقع پر اپنے الگ الگ پیغامات میں صدر ڈاکٹر عارف علوی اور وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ اور ان کے ساتھیوں کی شہادت عزم اور استقامت کی علامت ہے کہ انسان کو ہمیشہ حق کا ساتھ دینا چاہیے اور قربانی سے کبھی دریغ نہیں کرنا چاہیے۔ مقصد کے لیے زندگی

صدر علوی نے قوم پر زور دیا کہ وہ حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ کی تعلیمات کے مطابق نفرت ، بغض اور فرقہ واریت سے اوپر اٹھیں۔

صدر نے کہا کہ قوم کو اپنے مذہب ، قوم اور ملک کے لیے عزم اور استحکام کا استعارہ بن کر ہر قسم کی قربانیوں کے لیے تیار رہنا چاہیے کیونکہ یہ راستہ دنیا اور آخرت میں کامیابی کی طرف جاتا ہے۔

وزیر اعظم عمران نے اہل وطن پر زور دیا کہ وہ حق اور انصاف کی حمایت کر کے حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ کو خراج تحسین پیش کریں ، اس کے علاوہ باطل کے ہر ناپاک حربے کو ناکام بنا دیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ امام حسین رضی اللہ عنہ باطل کے خلاف طاقت اور آنے والے وقتوں میں ظلم کے خلاف لڑنے والی تمام تحریکوں کے لیے طاقت کی علامت بن چکے ہیں۔

دونوں رہنماؤں نے عوام سے کہا کہ وہ وبائی امراض سے تحفظ کے لیے کوویڈ 19 ایس او پیز پر عمل درآمد کو یقینی بنائیں۔

یوم عاشور کے موقع پر اپنے پیغام میں وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کہا کہ یہ دن ہمیں حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ کے پیغام اور ان کے تاریخی کردار کی یاد دلاتا ہے۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ یوم عاشور حق اور صداقت کی فتح کا دن ہے۔ نواسہ رسول حضرت محمد صل اللہ علیہ وآلہ وسلم خاتم النبیین کی عظیم قربانی نے اسلام کو بلند کیا۔

وزیر نے مزید کہا کہ حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ کے ساتھیوں نے حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی حرمت کے لیے جو عظیم قربانی دی ہے وہ پوری دنیا کے لیے روشنی کی کرن ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ امام حسین رضی اللہ عنہ کی تعلیمات پر عمل کرتے ہوئے ہمیں بلند مقاصد ، ثابت قدمی اور سچائی کے لیے کسی بھی قربانی سے گریز نہیں کرنا چاہیے۔





Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *